Ishaat

شعبہ اشاعت

1- مجلس شوریٰ 1966ء کی سفارشات کے مطابق ضروری ہے کہ ہر مجلس اپنے نام رسالہ ’’خالد‘‘ اور ’’تشحیذالاذہان‘‘ جاری کرائے۔ قائدین اضلاع اس بارہ میں خاص طور پر جدوجہد کریں اور ذی ثروت احباب میں تحریک کر کے مالی استطاعت نہ رکھنے والی مجالس کے نام رسائل جاری کرائیں۔

2-حسبِ فیصلہ شوریٰ 1966ء قائدین مجالس اس بات کا اہتمام کریں کہ زیادہ سے زیادہ خدام رسالہ ’’خالد‘‘ جاری کروائیں اور رسالہ ’’تشحیذالاذہان‘‘ بچوں والے گھر میں ضرور جائے۔ بڑی مجالس اس طرف خاص توجہ دیں۔

3-رسالہ ’’خالد‘‘ اور ’’تشحیذالاذہان‘‘ جاری کروانے کا طریق

قائد صاحب مجلس کے ذریعہ شرح کے مطابق سالانہ چندہ جمع کروا کے رسید حاصل کی جائے اور رسید پراپنا مکمل پتہ لکھوایا جائے۔ اگر پہلے سے خریدار ہیں تو خریداری نمبر بھی درج کروائیں اور اس رسید کی فوٹو کاپی بھجوا کر ادارہ کو اطلاع کی جائے۔ قائدین اور زعماء خریداران کی رقوم اور ان کے مکمل ایڈریس ساتھ ساتھ مرکز ارسال کرتے رہیں تا ان کے نام رسائل فوری جاری کئے جا سکیں۔

4-بقایا داران سے بقایا جات وصول کرنے میں مرکزکی مدد کی جائے۔

5-صاحب علم احباب کو ماہنامہ ’’خالد‘‘ اور ’’تشحیذالاذہان‘‘ کیلئے اعلیٰ پایہ کے علمی، دینی و تربیتی مضامین لکھنے کی ترغیب دلائی جائے۔ رسالہ خالد کیلئے خاص طور پر بزرگوں کی سیرت و سوانح، عام معلومات، مزاح، سفر نامہ، صحت، کھیل، سائنس، اچھی کتب کا تعارف اور دیگر علمی موضوعات وغیرہ پر مضامین بھجوائے جائیں۔ اسی طرح رسالہ تشحیذالاذہان کیلئے بزرگوں کی سیرت و سوانح، دلچسپ اور سبق آموز کہانیاں، لطائف، عام سائنسی معلومات، مختلف گھریلو ترکیبیں وغیرہ بھجوائی جا سکتی ہیں۔

6-مجلس خدام الاحمدیہ اور مجلس اطفال الاحمدیہ کی قابل اشاعت مساعی کی مختصر رپورٹیں ’’خالد‘‘ اور ’’تشحیذالاذہان‘‘ میں اشاعت کیلئے ماہانہ رپورٹوں سے الگ طور پر مرکز میں بھجوائی جائیں۔

7-مجالس ’’ خالد‘‘ اور ’’تشحیذالاذہان‘‘ کیلئے اشتہارات حاصل کر کے مرکز میں بھجوائیں۔

8-مقامی پریس سے سوشل تعلقات اور رابطہ پیدا کیا جائے اور خدام کو اخبارات و رسائل میں لکھنے کی ترغیب دلائی جائے۔ خصوصاً ملک و قوم کی بہبود سے متعلق مضامین اور خطوط وغیرہ اور شائع شدہ مساعی کی نقول مرکز بھجوائی جائیں۔

9-مرکز کی اجازت کے بغیر مجالس کوئی ایسی اشاعت نہ کریں جس کی ذمہ داری مجلس خدام الاحمدیہ پر عائد ہوتی ہو۔ (مجلس خدام الاحمدیہ کے شعبہ جات سے متعلق خدام یا حلقہ جات کو بھجوائی جانے والی ہدایات اس سے مستثنیٰ ہونگی)

10-خلفائے کرام کے وہ ارشادات جو خدام الاحمدیہ کے بارے میں ہیں وہ ’’مشعل راہ‘‘ کے نام سے شائع شدہ ہیں اس کی روشنی میں مجالس اور خدام ان اغراض و مقاصد کو ہمیشہ مدنظر رکھیں جن کیلئے مجلس قائم ہوئی ہے۔