Waqar-e-Amal

شعبہ وقار عمل

وقار عمل کی حقیقی روح یہ ہے کہ نوجوانوں میں یہ احساس پیدا کیا جائے کہ کام کرنا باعث عزت اور بیکار رہنا باعث عار ہے۔ اس لئے کسی کام کی راہ میں جھوٹی عزت کو حائل نہ ہونے دیا جائے اور کسی کام اور پیشہ کو اور اس سے منسلک کسی فرد کو نفرت اور حقارت سے نہ دیکھا جائے نیز عام زندگی میں اپنے کام خود اپنے ہاتھ سے کرنے کی عادت پیدا کی جائے۔ محنت مشقت اور جفاکشی کی عادت ڈالی جائے۔ وقار عمل انفرادی سطح پر بھی ہوتا ہے اور اجتماعی سطح پر بھی۔

انفرادی وقار عمل

انفرادی وقار عمل یہ ہے کہ نوجوان اپنے کام خود اپنے ہاتھ سے کریں اس سلسلے میں آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کا عملی نمونہ ہمارے سامنے ہے کہ آپ اپنے روز مرہ کے کام خود اپنے ہاتھ سے کیا کرتے تھے۔ انفرادی وقارعمل کی کچھ تفصیل یہ ہے کہ:
(i) گھر کے کام کاج میں ہاتھ بٹانا۔
(ii) سودا سلف خرید کر لانا۔
(iii) سفر میں اپنا سامان اُٹھانا۔
(iv) اپنے گھر میں پودے وغیرہ لگانا اور ان کی حفاظت کرنا۔
(v) رومال، بنیان، جراب وغیرہ دھونا۔
(vi) جوتے پالش کرنا وغیرہ۔

اجتماعی وقار عمل

مجالس اپنے حالات اور وسائل کے مطابق ہر ماہ کم از کم ایک اجتماعی وقار عمل ضرور منعقد کریں۔ جس میں تمام خدام کو شامل کرنے کی بھرپور کوشش ہو۔
اجتماعی وقار عمل میں سڑکوں کی تعمیر، نالیوں، گزرگاہوں اور راستوں کی مرمت اور صفائی، گڑھوں کو پُر کرنا، بیوت اور مراکز نماز کی اجتماعی صفائی، شجر کاری، پلوں کی درستی، پبلک پارکوں، کھیل کے میدانوں کی درستی و تیاری، ماحول کی تزئین وغیرہ شامل ہیں۔

مثالی وقار عمل

ہر سہ ماہی میں کم از کم ایک مثالی وقار عمل کیا جائے یہ وقار عمل مجلس کی سطح پر بھی منعقد کیا جائے اور ضلع کی سطح پر بھی۔
مجلس کی سطح پر ہونے والا وہ وقار عمل مثالی قرار پائے گا جس میں
(i) کم از کم پچاس فیصد خدام حاضر ہوں۔
(ii) کم از کم دو گھنٹے کام کیا جائے۔
(iii) اور کام نمایاں نوعیت کا ہو۔
ضلع کی سطح پر ہونے والا وہ وقارعمل مثالی قرار دیا جائے گا جس میں
(i) حاضری کے اعتبار سے ضلع کی جملہ مجالس میں سے کم از کم چالیس فیصد مجالس کی نمائندگی ہو۔
(ii) ضلع کی کل تجنید کے کم از کم 20% خدام شامل ہوں۔
(iii) کم از کم دو گھنٹے کام کیا جائے۔
(iv) کام نمایاں نوعیت کا ہو مثلاً بیت الذکر یا کسی مستحق کے مکان کی تعمیر، سڑک اور پلیوں کی تعمیر و مرمت وغیرہ۔
یہ ضروری نہیں کہ ضلعی مثالی وقار عمل ایک جگہ پر ہی ہو جن اضلاع میں خدام کی تعداد زیادہ ہے یا مجالس دور دور ہیں وہاں حسبِ ضرورت حلقہ جات بنا کر بھی وقار عمل کروایا جا سکتا ہے۔ اس صورت میں ان سب کی مجموعی رپورٹ اکٹھی مرکز بھجوائی جائے۔

مثالی وقار عمل کے ضمن میں چند اہم امور

کوشش کی جائے کہ مثالی وقار عمل میں ہر طبقے کے لوگ شامل ہوں۔ خاص طور پر جو معاشرے میں نمایاں حیثیت رکھتے ہیں۔ اطفال کو بھی وقارعمل میں شامل کیا جائے۔ خصوصاً بڑی عمر کے اطفال کو ضرور شامل کیا جائے۔ انصار سے بھی شمولیت کی درخواست کی جائے۔ اس موقع پر کسی بااثر دوست کو آغاز یا اختتام پر شمولیت کی دعوت دیں۔ مقام وقار عمل کی وقار عمل سے پہلے ، کام کے دوران اور بعد میں قدرتی انداز میں تصاویر لی جائیں اور چند منتخب تصاویر مرکز بھجوائی جائیں اگر ممکن ہو تو ایسے وقار عمل کی جھلکیوں کی ویڈیو فلم تیار کر کے مرکز بھجوائیں۔ غیر از جماعت احباب کے تذکرے اور تبصرے بھی مرکز میں بھجوائیں۔ اگر کسی اخبار وغیرہ میں اس کی رپورٹ شائع ہو تو اس کا تراشہ بھی ارسال فرمائیں۔

وقار عمل کے ضمن میں عمومی ہدایات

اپنے گھر، گلی اور محلہ کے ماحول کو صاف ستھرا رکھنے کی کوشش کی جائے۔ وبائی امراض سے بچاؤ اور صحت مند ماحول پیدا کرنے کی غرض سے مکھی اور مچھر کے خاتمہ کیلئے سپرے وغیرہ کیا جائے۔ راستوں اور گزرگاہوں سے تکلیف دہ اور گند پھیلانے والی اشیاء ہٹائی جائیں۔ اپنی مدد آپ کے تحت کام کرنے کا جذبہ پیدا کیا جائے۔ مجالس اور اضلاع اپنے پاس وقارعمل کا ضروری سامان مثلاً کسیاں وغیرہ خرید کر محفوظ رکھیں نیز احباب جماعت کو بھی تحریک کی جائے کہ وہ باغبانی اور وقار عمل کیلئے استعمال ہونے والا سامان خرید کر گھروں میں رکھیں تا کہ حسبِ ضرورت استعمال میں آ سکے۔